Sunday, May 9, 2021

یہ واقعہ انیس سو ستراہ کا ہے

یہ واقعہ انیس سو ستراہ کا ہے۔ جو عراق کے پہاڑوں میں ایک برطانوی جنرل کا ہے۔ ایک دن جنرل کا سامنا ایک چرواہے سے ہوا۔ جنرل چرواہے کی طرف متوجہ ہوا اور اپنے ساتھیوں سے کہا کہ اس سے کہو کہ جنرل تمہارے کتے کو ذبح کرنے کے بدلے میں ایک پاؤنڈ دے گا۔ کتا چرواہے کے لئے بہت اہم ہوتا ہے۔

جو چرواہے کے خیال میں اس کی بکریاں چراتا ہو ، کھوئے ہوئے ریوڑ کو واپس لاتا ہو، ریوڑ کو جانوروں کے حملوں سے بچاتا ہو، لیکن چرواہے کا کتا آدھے ریوڑ کی قیمت سے زیادہ ہوتا ہے۔ چرواے کے چہرے پر ایک لالچی کی مسکراہٹ پھیل گئی تھی، چرواے نے کتے کو پکڑ اور اسے جنرل کے سامنے ذبح کردالا۔

- Advertisement -

اس کے بعد جنرل نے چرواہے سے کہا ، “اگر تم اس کی کھال بھی اتارو گے تو میں تمہیں ایک اور پونڈ دینے کے لئے تیار ہوں۔ چرواہے نے جنرل کی بات فورا ہی قبول کرلی۔ اور بھر چرواہا نے خوشی سے کتے کی کھال کو بھی اتار دیا۔ اور بھر جنرل نے چرواہے کو پورے تین پاؤنڈ ادا کیے۔ جنرل کچھ قدم آگے تھا کہ جب اس نے پیچھے سے چرواہے کی آواز سنی۔

تو دیکھا کہ چرواہا پیچھے آ رہا تھا اور پاس آہ کر بولا کہ جنرل، اگر میں کتے کا گوشت کھالوں تو کیا آپ مجھے ایک اور پونڈ دیں گے؟ جنرل نے چرواے کو انکار کردیا۔ اور بھر بولا کہ میں صرف آپ کی نفسیات اور اوقات دیکھنا چاہتا تھا۔ آپ نے اپنے محافظ جیسا دوست کو تین پاؤنڈ کے لئے ذبح کر ڈالا۔ اس کی کھال اتار دی۔ اور اس کے ٹکڑوں کر ڈالے اور بھر تم چوتھے پونڈ کے لئے کھنا چاہتے ہے۔ اور جنرل بولا کے آپ بھی تیار ہوجائیں اور مجھے یہاں پر یہی ضرورت تھی۔

تب جنرل نے اپنے ساتھیوں کو دیکھتے ہوئے بولا سے کہ یہ اس قوم کے لوگوں کہ خیالات ہیں۔ لہذا آپ لوگوں کو ان سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ آج مسلم ممالک اور معاشروں کا بھی یہی حال ہے ، وہ اپنی چھوٹی چھوٹی قیمت اور ضرورتوں کے لئے اپنی سب سے قیمتی اور اہم چیزوں کی تجارت کرلیتے ہیں۔ اور یہ وہ ہتھیار ہوتا ہے جسے ہر استعمار، قبضہ، اور ہر وحشی دشمن ہمارے خلاف استعمال کرتا ہے۔ اور جس کے ذریعہ اس نے حکومت حاصل کی ہے۔ اور جس کے ذریعہ اس نے لوٹا ہے ممالک کو۔

- Advertisement -

آج ہمارے ممالک کے بہت سارے ‘چرواہے’ موجود ہیں جو نہ صرف کتے کا گوشت کھانے کو تیار ہوجاتیں ہیں۔ بلکہ اپنے ہم وطنوں کے گوشت کو بھی کھا جاتے ہیں۔ اور کچھ لوک تو روپے میں اپنا وطن کو بھی بیچ دیتے ہیں۔ ڈاکٹر علی الوردی کی عربی کتاب میں ہے (لمحات اجتماعية من تاريخ العراق)

- Advertisement -
adminhttps://topstory.pk
Muhammad Fayyaz. Topstory.pk | Top Story, One Source For All Things Top Story. We’re Dedicated To Providing You The Very Best of Top Story, With An Emphasis On News, World, Technical, History, Article, Story

Related Articles

Kurulus Osman Season 2 Episode 58 English Urdu Subtitles

0
Kurulus Osman Season 2 Episode 58 English Urdu Subtitles Kurulus Osman Season 2 Episode 57 Review Drama: Kurulus Osman Episode: 31 Season: 2 Release Date: 13-05-2021 In Chapter 57, Kurulus...

Why can’t I read?

0
Why can't I read? Books are very cheap these days. But that was not the case in earlier times. Books were only available in large...

Kurulus Osman Season 2 Episode 57 Urdu English Subtitle

0
Full Watch Kurulus Osman Season 2 Episode 57 Urdu English Subtitle Kurulus Osman Season 2 Episode 56 Review Darama: Kurulus Osman Episode: 30 Season: 2 Release Date: 06-05-2021 Kurulus Osman...

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Latest Articles